نئے وزیراعظم برطانیہ کے ساتھ کھانا کھانے کے لیے پہلے سے بکنگ ۔۔۔ دو امیر ترین افراد نے کتنے میں بکنگ کروا لی ؟ حیران کر دینے والی خبر

لندن(ویب ڈیسک)پرتعیش ٹوری فنڈریزر میں برطانیہ کے نئے وزیراعظم کے ساتھ ڈنر 300000 پونڈ میں آکشن ہو گیا۔ یہ دو نامعلوم خوش قسمت بورس جانسن یا جیریمی ہنٹ میں سے کسی کے ساتھ ڈنر کریں گے ۔ٹوری لیڈر شپ کے انتخاب کیلئے 22 جولائی تک ووٹ ڈالے جائیں گے۔ تاہم اس مقابلے میں بورس جاسن کی

کامیابی کے آثار نمایاں ہیں اوروہ 24 جولائی کو وزیراعظم کا منصب سنبھال سکتے ہیں ۔ڈیلی میل نے پہلی بار اس ڈنر کی فروخت کا انکشاف کیا تھا۔ایک اندرونی ذریعے نے بتایا کہ وزیراعظم کے ساتھ ڈنر کی خریداری کیلئے دو نامعلوم افراد میں زبردست مقابلہ تھا تاہم بعد میں دونوں نے اتفاق کیا اور 150000فی کس ادائیگی کر دی۔ ابھی تک ڈنر خریدنے والے افراد کے نام افشا نہیں ہوئے ہیں۔ امکان ہے کہ ان کا پتہ اس وقت چلے گاجب ٹوری پارٹی عطیات کا باقاعدہ اعلان الیکٹورل کمیشن کو کرے گی۔ اپریل اور جون 2018 کے درمیان لیڈرز میل گروپ میں 50سےزائد ڈونرز نے شرکت کی تھی۔ ان کھانوں میں تھریسا مے بورس جانسن فلپ ہیمنڈ اور دیگر بھی موجود تھے۔ اخبار کے مطابق اس ڈنر کی فروخت سے کیش تک منسٹرز کی رسائی کے حوالے سے نئی تشویش بڑھ گئی ہے۔ لندن کے کلب میں تھریسا مے نے ڈنر دیا جس میں بورس جانسن اور جیریمی ہنٹ بھی شریک ہوئے مہمانوں نے سالانہ سمر پارٹی میں شرکت کیلئے 1500 پونڈ تک ادائیگی کیا۔فنڈ دینے والے ایک شخص کو ہنٹ اور اس کی بیوی کے قریب نشت ملی ۔ لیبرپارٹی چیئرمین ایان لیوری نے کہا کہ نوڈیل بریگزٹ سے لوگوں کی جابس اور زندگیوں کو خطرات لاحق ہورہے ہیں اور ٹوری لیڈر شپ انتخاب میں یہ صوت حال مضحکہ خیز ہے۔ انہوں نے کہا کہ حالات کو بدلنے کیلئے لیبر پرٹی کو منتخب کر کے حکومت میں لایا جائے تاکہ ہم ملک اورمعیشت کو درست سمت میں لے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں