19 سالہ مسلمان لڑکی شر پسندوں کے نشانے پر۔۔۔ ایسا کام کر دیا کہ جان کرآپ آگ بگولا ہو جائیں گے

برسل(ویب ڈیسک) ایک 19 سالہ لڑکی گھر جانے کے لیے پیدل جارہی تھی کہ گھات لگائے کچھ شرپسندوں نے اس کو گھیرلیا اور حملہ کرکے حجاب نوچ کر پھینک دیا۔ یہی نہیں ایک حملہ آور نے لڑکی کو لات مار کر زمین پر بھی گرا دیا اور پھر اس پر تیز دھار آلہ سے حملہ کردیا

جس میں وہ زخمی ہوگئی۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بیلجئم میں مسلم لڑکی پر حملہ کرنے کا ایک تازہ واقعہ پیش آیا ہے ، جس کی وجہ سے وہاں کی مسلم کمیونٹی کے درمیان خوف و ہراس کا ماحول پایا جارہا ہے۔ ایک 19 سالہ لڑکی گھر جانے کے لیے پیدل جارہی تھی کہ گھات لگائے کچھ شرپسندوں نے اس کو گھیرلیا اور حملہ کرکے حجاب نوچ کر پھینک دیا۔ یہی نہیں ایک حملہ آور نے لڑکی کو لات مار کر زمین پر بھی گرا دیا اور پھر اس پر تیز دھار آلہ سے حملہ کردیا ، جس میں وہ زخمی ہوگئی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ واقعہ بیلجئم کی راجدھانی برسلز کے نزدیکی علاقہ اینڈرلز میں پیش آیا۔ رپورٹس کے مطابق لڑکی نے جب اپنی جان بچا کر بھاگنے کی کوشش کی تو حملہ آور نے اس کا تعاقب کیا اور پھر اس کی قمیص پھاڑ دی۔ تاہم جب لڑکی نے شور مچایا تو حملہ آور مغلظات بکتے ہوئے فرار ہوگئے۔ حملہ آوروں نے اسلام مخالف بتاتیں بھی کہیں۔واقعہ دارالحکومت برسلز کے قریبی علاقے اینڈرلز میں پیش آیا جہاں نامعلوم ملزمان نے پیدل چلنے والی باحجاب لڑکی کو سر راہ وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔انیس سالہ لڑکی سڑک پر گھر جانے کے لیے پیدل سفر کررہی تھی کہ گھات لگائے شرپسندوں نے اسے گھیرلیا اور حملہ کرکے حجاب کھینچ دیا ، ایک حملہ آور نے لڑکی کو لات مار کر زمین پر گرا دیا جس کے بعد تیز دھار آلے سے ضرب لگائیں۔لڑکی نے جان بچانے کر بھاگنے کی کوشش کی تو حملہ آوروں نے اس کی قمیص پھاڑ دی اور لڑکی کے شور مچانے پر وہ مغلظات بکتے ہوئے فرار ہوگئے، حملہ آوروں نے اسلام مخالف جملے بھی کسے۔فوری طور پر مقامی پولیس نے لڑکی کی صحت کے حوالے سے کچھ نہیں بتایا تاہم واقعے کے ابتدائی شواہد اکٹھے کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔دوسری جانب نفرت انگیزی کے اس وحشیانہ واقعے نے اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں کو شدید تشویش میں مبتلا کردیا ہے، مسلم کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے اس واقعے کے بعد خود کو مزید غیر محفوظ تصور کرنے لگے ہیں۔(ش،ز،خ)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں